رسول ﷺ کا فرمان ہے سعید بخاری کی روایت ہے

پانچ قسم کے فتنوں کا پالا پڑتا ہے انسان کواہل و اعیال کا فتنہ یا تو شادی نہیں ہوئی فتنے کی زندگی میں چلا گیا

>

اور اگر شادی ہوئی ہے تو بیوی نماز نہیں پڑھتی پردہ نہیں کرتی اللّه کے احکامات کو پہچانتی نہیں ہے

. انسان کے نفس کا فتنہ طاقت ہے لیکن اللّه کے دین پہ نہیں لگ رہی شیطانی راستوں میں لگ رہی ہے

حسن نقوی سے کسی نے پوچھا سب سے زیادہ قیامت کے دن روتا ہوا کون نظر آئے گا تو جواب ملا جس میں اللّه نے صلاحیتیں تو رکھی ہوں لیکن ان صلاحیتوں کو اللّه کی نا فرمانی میں خرچ جو کرتا ہے یہ قیامت کے دن سب سے زیادہ روتا ہوا نظر آئے گاکسی کے لیےمال کا فتنہ غربت اتنی

کہ کھانے کو کچھ نہیں فتنہ ہے اور مال تو ہے لیکن حرام کا ہے یہ اس سے برا فتنہ ہے اولاد نہیں لوگ طعنے دیتے ہیں یہ فتنہ ہے اور اگر اولاد ہے تو کوئی بھی نمازیں نہیں پڑھتا یہ اس سے بڑا فتنہ ہے آج کل کے پر فتن دور کے اندر پڑوسی کا فتنہ اگر وہ اکیلا کہیں گھر بنا لے

تو خوف کا فتنہ پڑوسی تو ہے لیکن اللّه کا نا فرمان اسے سوائے موسیقی کے کچھ پسند ہی نہیں بہت بڑا فتنہ ہے اس لیے اللّه کے رسول ﷺ نے یہ فرمایا تھا اے اللّه میں تجھ سے ایسی پناہ مانگتا ہوں جو مجھے بڑھاپے سے پہلے بوڑھے کر دے دکھ اتنے دے۔ مجھے ایسی اولاد سے بچا جو میرے لیے باعث فتنہ ہو۔ اللّه مجھے ایسا مال نہیں چاہیے جو میرے لیے وبال زندگی اور وبال آخرت بن جائے۔ اللّه سب کے گھر والوں کو نیک بنا ئے آمین

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *