حضرت علی ؓ نے فرمایا شعبان کی پہلی جمعرات فاطمی ؓ وظیفہ ایک بار پڑھ لو تقدیر بدل جائیگی

ضرت علی ؓ نے اپنے ایک شاگر د سے فرمایا کہ میں تمہیں اپنا اور اپنی بیوی فاطمہ الزہرہ ؓ کا جوحضوراقدس ﷺ کی صاحبزادی سب گھر والوں میں زیادہ لاڈلی تھیں ان کا قصہ نہ سناؤں انہوں نے عرض کیا ضرور سنائیں ۔ فرمایا وہ خود چکی پیس۔تی تھیں جس سے ہاتھوں میں ک۔ھڈے پڑ گئے اور خود مشق بھر کر لاتی تھیں۔

>

جس پر سینہ پر رسی کے نشان پ۔ڑ گئے خود ہی ج۔ھاڑو لگا دیا کرتیں جس کیوجہ کپڑے میلے رہتے ایک مرتبہ نبی کریمﷺ کی خدمت میں کچھ غلام آئے ۔ میں نے حضرت فاطمہ الزہرہ ؓ سے کہا کہ تم اگر اپنے والد سے جاکر ان کی خدمت میں پیش ہوکر ایک خادم مانگ لاؤ تواچھا ہے۔ سہولت رہیگی ۔ وہ گئیں حضوراقدسﷺ کی خدمت میں لوگوں کا مجمع تھا۔ اسی لیے واپس چلی آئیں حضور اقدسﷺ نے دوسرے روز خود ہی مکان پر تشریف لائے اور فرمایا کہ تم کل کس کام کو آئی تھی ۔ وہ چپ ہوگئی ش۔رم کیوجہ سے بول نہ سکی ۔ حضرت علی ؓ فرماتے ہیں کہ میں نے عرض کیا حضور چکی سے ہاتھ پر نشان پ۔ڑ گئے۔

مشکیزہ بھرنے کیوجہ سے سینہ پر نشان پ۔ڑ گئے ۔جھاڑو دینے کیوجہ سے کپڑے میلے رہتے ہیں ۔ کل آپ کے پاس کچھ ل۔ونڈی غلام آئے تھے اس لیے میں نے ان سے کہا تھا کہ آپ خادم اگر مانگ لائیں تو ان مشقت میں سہولت ہوجائیگی ۔ حضوراکرمﷺ نے فرمایا فاطمہ اللہ سے ڈرت۔ی رہو اس کے فرض ادا کرتی رہو ۔ گھر کے کاروبار کرتی رہو جب سونے کیلئے جاؤ تو 33مرتبہ سبحان اللہ، 33مرتبہ الحمداللہ اور 34مرتبہ اللہ اکبر پڑھ لیا کرو یہ خادم سے بہتر ہیں ۔ انہوں نے عرض کیا کہ میں اللہ تعالیٰ کی تقدیر اور رسول کی تجویز سے راضی ہوں ۔

نبی کریمﷺ نے فرمایا کہ اسی قسم کا ایک اور واقعہ بھی حضرت فاطمہ ؓ سے ذکر کیا جاتا ہے ۔جس میں نبی کریمﷺ نے فرمایا بدر کے یتیم تم سے زیادہ مقدم ہیں ۔ آپﷺ نے یہی تینوں کلمات پڑھنے کی تلقین فرمائی ۔ حضرت فاطمہ ؓ نے فرمایا کہ میں اللہ کی تقدیر اور ان کے نبی ﷺ کی بتائی ہوئی تجویز پر راضی ہوں ۔ اللہ تعالیٰ نے ان کو ایسا کمال ظرف عطاء فرمایا کہ کوئی ثانی اس پوری دنیا میں نہ آج سے پہلا تھا نہ کوئی آئندہ ہوگا ۔ کوشش کریں کہ ان اذکار کو اپنی زندگی میں لانے کی جس کو حضرت علی ؓ سے منقول کیا گیا

۔معتبر روایات کے مطابق حضرت امام محمد باقرؑ سے مروی ہے کہ جناب زہراؓ کی تسبیح سے بہتر کوئی اور تسبیح و تمجید نہیں ہے ، جس سے عبادت الٰہی کی جائے ۔ کیونکہ اگر اس سے بہتر کوئی اور چیز ہوتی تو رسولﷺ خدا حضرت فاطمہ زہراؑ کو وہی عطا فرماتے ۔ اس کی فضیلت میں اتنی زیادہ احادیث منقول ہیں کہ ان سب کو اس مختصر سے رسالہ میں ذکر نہیں کیا جا سکتا۔ آپ نے اپنی زندگی میں بھی تسبیح فاطمہ کو معمول بنائیں انشاء اللہ رب کریم آپ کی زندگی میں بہت سی برکتیں عطاء فرمائے گا اور رزق کے خزانے کھول دے گ

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *