100 سال پہلے بھیجا جانے والا خط بالآخر اپنی منزل پر پہنچ گیا

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دوستو پہلے پہل لوگ ایک دوسرے کے حال احوال جاننے کیلئے ڈاک خانے پر خط بھیجا کرتے تھے۔ خط بھیجنے کا ہمیں تب پتہ چل جاتا تھا، کہ جب ہمیں اس کا جواب موصول ہو جاتا۔ آج ہم آپ کو ایک ایسے خط کے بارے میں بتانا چاہتے ہیں، کہ جو پورے سو سال بعد اپنے رشتہ داروں کو ملا گیا۔ امریکہ میں 100سال پہلے بھیجاجانے والا ایک خط بالآخر اپنی منزل مقصود تک پہنچ گیا۔

ٹی این این کی رپورٹ کے مطابق یہ خط برٹنی کیچ نامی ایک خاتون کے گھر کے پتے پر آیا۔ برٹنی نے حسب معمول اپنے میل باکس سے آنے والی ڈاک نکالی تو اسے توقع تھی، کہ کچھ بلز اور دیگر چیزیں ہوں گی لیکن وہ اس خط کا لفافہ دیکھ کر دنگ رہ گئی۔ کیونکہ آج کل اس طرح کے پوسٹ کارڈز بھیجنے کا رواج ہی نہ تھا۔ رپورٹ کے مطابق جب برٹنی نے لفافے کو دیکھا تو اس پر خط بھیجے جانے کی تاریخ 29اکتوبر 1920ءلکھی ہوئی تھی۔ یہ تاریخ پڑھ کر برٹنی چکرا کر رہ گئی۔ کہ 100سال پہلے لکھا گیا، خط آج اپنے پتے پر پہنچ رہا تھا تاہم یہ خط برٹنی یا اس کے کسی فیملی ممبر کے نام نہیں تھا، بلکہ کسی رائے مک کوئی(Roy McQueen)کے نام تھا۔ خط میں لکھا تھا کہ پیارے کزنز، امید ہے آپ ٹھیک ہوں گے، ہم بھی تقریباً ٹھیک ہیں۔ امی کے گھٹنوں میں درد ہے، یہاں بلا کی سردی پڑ رہی ہے۔ میں نے ابھی اپنا تاریخ کا سبق ختم کیا ہے اور بہت جلد سونے جا رہا ہوں۔ میرے ابواپنی شیو کر رہے ہیں اور امی مجھے آپ کا ایڈریس بتا رہی ہیں۔ امید ہے ہمارے دادا دادی بھی ٹھیک ہوں گے، ہمیں جوابی خط لکھنا مت بھولنا۔ برٹنی نے یہ خط لکھنے اور جنہیں لکھا گیا تھا ان کے کسی رشتہ دار کی تلاش کی امید میں سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ کر دی ہے، پوسٹ میں اس نے لکھا ہے کہ مجھے آج یہ خط موصول ہوا۔ یہ خط بہت پرانا ہے۔ میں چاہتی ہوں کہ میں یہ خط لکھنے والے، یا جنہیں لکھا گیا تھا ان کے کسی رشتہ دار تک پہنچا دوں۔ آپ میں سے کوئی شخص اس خط کو بھیجنے والے یا موصول کرنے والے کے بارے میں جانتا ہے؟ ہم امید کرتے ہیں کہ آج کی یہ تحریر آپ کو ضرور پسند آئی ہوگی مزید اچھی تحریر کے لئے ہمارے پیج کو فالو اور لائک کریں۔ اور اپنی قیمتی رائے کے بارے میں کمنٹ میں ضرور آگاہ کریں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *