یہ عادت چھوڑ دیں ورنہ آپ کے دانت گر جائیں گے

سگریٹ نوشی کے بارے میں سب کو پتا ہے کہ سگریٹ صحت کے لیے مضر ہے۔ اور اس استعمال سے اپ مختلیف بیماروں میں مبتلع ہوسکتے ہے۔ لیکن اج ہم اپ کو ایسے نقصان کے بارے میں بتانا چاہتے ہے۔ جس بارے میں سائنسدانوں نے نئی تحقیق کی ہے جرمن انسٹیٹیوٹ آف ہیومین نیوٹریشن اور یونیورسٹی آف برمنگھم میں ہونے والی تحقیق میں خبردار کیا گیا ہے۔

>

کہ سگریٹ نوشی سے نہ صرف دانت بدصورت ہوتے ہیں بلکہ یہ دانتوں کو کمزور کر کے گرا بھی دیتے ہیں۔ انہوں نے اپنی نئی ریسرچ کے بارے میں کہا۔ کے سگریٹ پینے والے افراد کی دانت سگریٹ نہ پینے والوں سے 3.6 گنا جلدی گرتے ہیں جبکہ ہوتی میں سے کوئی نوشی کرنے والی عورت کے دانت نہ پینے والوں سے 2.5 گنا جلدی گرتے ہیں۔ اور دانتوں جیسے خوبصورت نعمت سے محروم ہو جاتے ہیں۔تحقیق کے مطابق دانتوں کے گرنے اور سگریٹ نوشی کا یہ تعلق نوجوانوں میں زیادہ واضح نظر آتا ہے جبکہ یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ چین اسموکرز کےد انت ان لوگوں کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے گرتے ہیں جو نسبتاً کم سگریٹ پیتے ہیں۔ یونیورسٹی آف برمنگھم کے پروفیسر اور اس تحقیق کے بانی تھامس ڈائی ٹرچ کا کہنا ہے کہ تحقیق کے دوران 23 ہزار سے زائد افراد کا ڈیٹا اکٹھا کیا گیا جس سے یہ بات سامنے آئی کہ زیادہ تر دانتوں کے گرنے کی وجہ مسوڑوں کی بیماری ’پریڈ ڈونٹیسٹ‘ ہے جو کہ تمباکو سے پیدا ہوتی ہے۔ ان کاکہنا ہے کہ سگریٹ نوشوں کے مسوڑوں میں جلد خون آنے لگتا ہے جو ’پریڈ ڈونٹیسٹ‘ کی علامت ہے تاہم سگریٹ نوشی چھوڑ دینے سے دانت گرنے کا عمل رک جاتا ہے تاہم دانت گرنے کا خطرہ پھر بھی موجود رہتا ہے۔ جرمن انسٹیٹیوٹ ااف ہیومین نیوٹریشن کے پروفیسر کولیڈ کا کہنا ہے کہ مسوڑوں کی بیماریاں اور دانتوں کا تھوڑا تھوڑا ٹوٹنا سگریٹ نوشوں کے دانتوں پر سگریٹ نوشی کے اثرات کا آغاز ہوتا ہے جو انہیں اشارہ دیتا ہے کہ وہ سگریٹ نوشی چھوڑ دیں اس سے پہلے کہ وہ پھیپھڑوں کے کینسرجیسی مہلک بیماریوں کا شکار ہوں۔ امریکی سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن کا کہنا ہے کہ جن افرد کی عمریں 65 سے 74 سال کے درمیان ہوتی ہے ان میں سے 13 فیصد کے دانت گر جاتے قدرتی طور پر مکمل طور پر گر جاتے ہیں۔ واضح رہے کے سگریٹ نوشی صرف دانتوں کیلئے ہی نہیں بلکہ پوری صحت کے لیے مضر ہیں۔ اور ہمیں چاہیے کہ ہم اپنے صحت کا خیال رکھیں۔ کیوں کہ سگرٹ پیتے وقت صرف آپ کے لئے ہی نہیں بلکہ اس کا دھواں اپ کی نزدیک بچوں کیلئے بھی مضر ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.