کیا آپ جانتے ہیں کہ جاپانی عورتیں موٹی کیوں نہیں ہوتیں ؟ وجہ انتہائی حیران کن

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) انٹرنیٹ اور ٹی وی کی وجہ سے دنیا کا کوئی ایسا علاقہ نہیں ہے جو کسی نے دیکھا نہ ہو۔ آج ہم آپ کو جاپانی کے بارے میں بتانا چاہتے ہیں آپ سب نے جاپانی خواتین کو تو دیکھا ہوگا۔ لیکن ان میں ایک بات نوٹ نہیں کی ہوگی۔ ہاؤ جاپانی خواتین کافی دبلی پتلی ہوتی ہے شاید ہی کوئی جاپانی لڑکی موٹی نظر آتی ہو۔

>

ایک جاپانی خاتون مصنفہ نامی موریاما نے اپنی کتابجاپانی خواتین بوڑھی یا موٹی نہیں ہوتیں میں لکھا ہے کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ جاپانی خواتین اپنے باورچی خانے میں ایسی غذائیں نہیں رکھتیں جنہیں کھا کر وزن بڑھے،اسی طرح وہ ایسے کھانے کھائے جاتے ہیں جو وزن کم کرنے میں مدد دیں۔ ان کے باورچی خانے میں سب سے پسندیدہ کھانے کی اشیامیں سمندری کھانے، پھل، مچھلی، چاول، سبزیاں اور سبز چائے شامل ہیں۔یہ تمام اشیانہ صرف وزن کم کرتی ہیں بلکہ ان کے کھانے سے عمر بڑھنے کا عمل بھی سست ہوجاتا ہے اورانسان جوان نظر آنے لگتا ہے۔ یہ امر بھی دلچسپی سے خالی نہیں کہ جاپان دنیا کی آبادی کا صرف 2فیصد ہے جبکہ یہاں کے لوگ دنیا میں مچھلی کی پیداوار کا10فیصد کھاتے ہیں۔موریاما کہتی ہے کہ جاپانی بچوں کو بچپن ہی سے آرام سے اور چبا چبا کر کھانا کھائیں۔ وہ کہتی ہے کہ جاپانی کھانا بنانے میں انتہائی آسان اور تیل مصالحوں سے پاک ہوتا ہے جو کہ جسم میں کافی پیچیدگی پیدا کرتے ہیں۔جاپانیوں کی یہ عادت ثانیہ ہے کہ وہ ہر کھانے کے ساتھ چاول ضرور کھاتے ہیں۔ ناشتے میں یہ لوگ سبز چائے،ابلے ہوئے چاول، سوپ، لہسن اور مچھلی کا ٹکڑا کھاتے ہیں۔میٹھا کھانے میں جاپانی بہت ہی زیادہ احتیاط کرتے ہیں اور اگر انہیں میٹھا کھانے کو دیا جائے تو بہت ہی کم کھاتے ہیں۔جاپانی خواتین ورزش بھی باقاعدگی سے کرتی ہیں اور ساتھ ہی سائیکلنگ اور پہاڑوں پر چڑھنا بھی ان کا شوق ہے۔ یاد رہے کہ ہمارے ہاں یہ بازاروں میں لذیذ اور ذائقہ دار کھانے سب سے زیادہ نقصان دہ ہے۔ہمارے جسم کیلئے۔ ہمیں چاہیے کہ ہم بازاری کھانوں سے پرہیز کریں۔ اور زیادہ سے زیادہ سبزیاں کھائے اس سے ہماری صحت بھی اچھی ہوگی اور قوت مدافعت بھی زیادہ ہوگی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.