کورونا وائر س کی وجہ سے عیدالاضحی پر قربانی ترک کی جا سکتی ہے یا نہیں ؟علما کرام نے اہم شرعی مسئلے کا حل بتا دیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) عید الاضحی پر کرونا وئراس کی وجہ سے قربانی کا ارادہ ترک کر دیا جائے تو کیا ایسا فرد گناہ زمرے میں ائے گا؟ علماء کرام اس کے جواب میں بتایا ہے۔ کہ کورونا کی وجہ سے احتیاطی تدابیرضرور اختیار کی جائیں، لیکن اس یی وجہ سے شرعی احکام کو ترک کردیا جائے، شعائر اسلام اپ کو اس کی اجازت نہیں دی تھی، مطلب جائز نہیں۔
اگر آپ کے لیے اپنے گھر میں قربانی کا اہتمام ممکن نہیں ہے تو کسی جگہ اجتماعی قربانی میں حصہ لے لیں۔ لیکن صاحب نصاب ہونے کے باوجود قربانی نہ کرنے سے شدید گناہ گا ر ہوں گے۔ رسول اللہ ﷺنے ایسے شخص پر جو وسعت کے باوجود قربانی نہ کرے، شدید ناراضی کا اظہار فرمایا ہے۔ اور اسے عید گاہ کے قریب آنے سے بھی روک دیا۔ واضح رہےعلمائے کرام نے واضح بات کی کہ آپ قربانی کو ترک نہیں کر سکتے حالانکہ آپ اپنی احتیاطی تدبیر بڑھانا چاہیے تو بڑھا سکتے ہیں۔ مطلب جس پر قربانی فرض ہے وہ ضرور قربانی کرے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *