پختہ یقین

ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ ایک مرتبہ ایک بحری جہاز سمندر میں ڈوب جاتا ہے۔ جس میں صرف ایک ہی بندہ بچ جاتا ہے۔ وہ کنارے پر تیر کر پہنچتا ہے۔ وہ شخص کافی دن اس ساحل پر رہتا ہے۔ اور پھلوں پر تھوڑا بہت کھانا کھا کر گزارہ کرتا ہے۔ اور شخص اپنے لئے وہاں رہنے کے لئے ایک جھونپڑی تیار کرتا ہے۔

>

ایک دن وہ شخص جنگل سے پھل لا رہاہوتا ہے تو دیکھتا ہے کہ اس کے ہٹ (جھونپڑی) کو آگ لگی ہوئی ہوتی ہے، وہ بہت دل برداشتہ ہوتا ہے اور سوچتا ہے کہ اے خدا میرے ساتھ ایسا کیوں کر رہا ہے؟ وہ بہت روتا ہے اور روتے روتے سو جاتا ہے، جب اس کی آنکھ کھلتی ہے تو دیکھتا ہے کہ ساحل پر ایک بڑا بحری جہاز کھڑا ہوا ہوتا ہے، وہ بہتخوش ہوتا ہے اور اس کی طرف بھاگتا ہے۔بحری جہاز میں سوار ہو کر وہ ان سے پوچھتا ہے کہ انھوں نے ادھر کا رخ کیسے کر لیا، تو وہ اس کو بتاتے ہیں کہ انھوں نے جزیرے سے دھواں اٹھتے ہوئے دیکھا تھا اور وہ سمجھ گئے کہ کسی کو ان کی مدد کی ضرورت ہے۔ اس آدمی نے دل میں اپنے رب کا شکر ادا کیا کہ اس کا گھر جل گیا مگر اس میں اس ہی کی اپنی بھلائی پوشیدہ تھی۔جو کچھ بھی آپ کے ساتھ ہوتا ہے، اس پر پریشان مت ہوں، جب برا بھی ہو، تو بھی اس میں کچھ بھلائی کا پہلو ضرور پوشیدہ ہوگا۔ بس اپنا یقین پختہ رکھیں، یہ بہت ضروری ہے بے شک اللہ تعالی سب کی مدد کرنے والا ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *