پانچ سورہ مبارکہ جنہیں سفر میں پڑھا

دعاؤں کے مجموعہ حصن حصین کے مطابق حضور نبی کریمؐ نے ایسی پانچ سورہ مبارکہ کے بارے میں فرمایا ہے کہ جنہیں سفر کے دوران پڑھنے سےانسان خوشحال اور مال دار ہو جاتا ہے، حضرت جبیر بن مطعمؓ سے نبی کریمؐ نے فرمایا کہ اے جبیر!کیا تمہیں یہ بات پسند ہے

کہ سفر میں نکلو تو اپنے سب ساتھیوں سے بڑھ کر اچھے حال میں رہو اور سب سے زیادہ تمہارے پاس زادِ راہ موجود رہے. جس پر حضرت جبیرؓ نے عرض کیا کہ میرے ماں باپ آپؐ پر قربان ہوں، میں ضرور یہ چاہتا ہوں.

اس پر نبی کریمؐ نے فرمایا تم یہ پانچ سورتیں سفر میں پڑھا کرو، سورۃ کافرون، سورۃ نصر، سورۃ اخلاص، سورۃ فلق، سورۃ الناس. ہر سورۃ کو بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِیمِ سے شروع کیا جائے،

پھر سورۃ الناس کے بعد بھی بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِیمِ پڑھی جائے، اس طرح پانچ سورتیں اور چھ مرتبہ بسم اللہ شریف پڑھنی ہے. حضرت جبیرؓ کا بیان ہے کہ میں غنی اور زیادہ مال والا تھا جب سفر میں نکلتا تھا تو اپنے ساتھیوں میں سے سب سے زیادہ بدحال ہو جاتا تھا لیکن نبی پاکؐ کے بتائے ہوئے طریقے کی وجہ سے میرا زادِ راہ سب سے زیادہ رہتا۔

ﻣﻮﺳﯽٰ ﻋﻠﯿﮧ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ﺍﯾﮏ ﺑﻨﺪﮦ ﺁﯾﺎ ﺍﻭﺭﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﻏﺮﯾﺐ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﺎ ﺍﻟﻠﮧ ﮐﮯ ﻧﺒﯽ ﻣﯿﺮﮮ ﭘﺎﺱ ﻣﺎﻝ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ ﺁﭖ ﮐﻮﺋﯽ ﺷﻔﻘﺖ ﻓﺮﻣﺎﺋﯿﮟ.

ﻣﻮﺳﯽٰ ؑ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺍﯾﺴﺎﮐﺮ ﺭﻭﭨﯽ ﺍﻭﻧﭧ ﭘﺮﺑﯿﭩﮫ ﮐﺮﮐﮭﺎ ، ﺗﯿﺮﺍﻣﺎﻝ ﮐﻢ ﮨﻮﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ. ﻧﺒﯽ ﮐﺎ ﺣﮑﻢ ﺗﮭﺎ ،ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﭨﮭﯿﮏ ﮨﮯ.

ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﺍﻭﻧﭧ ﭘﮧ، ﭘﮩﻠﮯ ﺩﺳﺘﺮﺧﻮﺍﻥ ﺑﭽﮭﺎﺗﺎ ﺗﮭﺎ، ﺍﺏ ﺟﮩﺎﮞ ﺑﮭﯽ ﺟﺎﺗﺎ ﺍﻭﻧﭧ ﭘﺮﺑﯿﭩﮫ ﮐﺮﮐﮭﺎﺗﺎ ﮐﭽﮫ ﻋﺮﺻﮯ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺁﯾﺎ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﺎ ﮐﮧ ﺳﺮﮐﺎﺭ ﻣﺎﻝ ﺗﻮ ﺍﻭﺭ ﺑﮍﮪ ﮔﯿﺎ ﺗﻮﻣﻮﺳﯽٰ ﻋﻠﯿﮧ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﺗﺠﮭﮯ ﮐﮩﺎ ﺗﮭﺎ ﻧﺎ ﺍﻭﻧﭧ ﭘﮧ ﺑﯿﭩﮫ ﮐﺮﮐﮭﺎﻧﺎ ﮨﮯ.

ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﺍﻭﻧﭧ ﭘﺮﺑﯿﭩﮫ ﮐﺮﮐﮭﺎﻧﮯ ﺳﮯ ﺩﺳﺘﺮﺧﻮﺍﻥ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﭽﮭﺘﺎ، ﮐﮭﺎﻧﮯ ﮐﮯﺫﺭﮮ ﻧﯿﭽﮯ ﮔﺮﺗﮯ ﺭﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﻧﭧ ﮨﻠﺘﺎ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﻣﻮﺳﯽٰ ﻋﻠﯿﮧ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺗﻮ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﯿﺴﮯ ﮐﮭﺎﺗﺎ ﺗﮭﺎ ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﮐﭙﮍﺍ ﺳﻠﻮﺍ ﻟﯿﺎ ﺗﮭﺎ

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *