نہاتے وقت ایک ایسا کام جس سے آپ سنگین بیماری میں مبتلا ہو سکتے ہیں

اسلام اباد (نیوز ڈیسک) نہاتے وقت جانے انجانے میں ہم کچھ ایسا کر دیتے ہیں۔ جس کا نقصان ہمیں بعد میں بھگتنا پڑتا ہے یہ نہیں کہ دوران ہم سے کچھ ایسی غلطیاں ہوتی ہیں کہ جس کے نقصان کا پتہ میں بعد میں چل جاتا ہے۔ اور وہ اس وقت سب کچھ ہاتھ سے نکل گیا ہوتا ہے۔ ماہر جلد ڈاکٹر ڈاکٹر کرسٹی نے ایک حیران کن انکشاف کیا ہیں۔

ان کا کہنا ہے کے اکثر کمر پر لوگوں کے دانے ہوتے ہیں۔جس کا سب سے بڑا وجہ ہمارے نہانے کا انداز ہے۔ دی انڈیپنڈنٹ نیوز رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر کرسٹی کا مزید کہنا ہے کہ کمر پر دانے کی بنیادی وجہ کچھ ہارمونز کی وجہ سے نکلتے ہیں۔ جن کے باعث بالوں کی جڑوں میں موجود گلینڈ زیادہ چکنائی پیدا کرنے لگتے ہیں۔ ان گلینڈز سے چکنائی کے زیادہ اخراج کی وجہ سے جلد پر دانے اور پھنسیاں بننے لگتی ہیں۔ این ایچ ایس کے مطابق 50 فیصد خواتین اور40 فیصد مردوں میں زیادہ 20 کی دہائی میں ایسا ہوتا ہے۔ڈاکٹر کرسٹی کہتی ہیں کہ ہم میں سے اکثر لوگ نہاتے ہوئے جب سر پر شمپو یا کنڈیشنر لگاتے ہیں تو بالوں کو اچھی طرح پانی سے دھوئے بغیر ہی باقی جسم کو بھی دھونا شروع کردیتے ہیں۔ خصوصاً کنڈیشنر ایسی حالت میں ہمارے بالوں سے بہتا ہوا باقی جلد پر بھی چلا جاتا ہے اور اس پر ایک چکنی تہہ بنا دیتا ہے، جو بعدازاں دانوں اور پھنسیوں کا سبب بنتی ہے۔ انہوں نے اس مسئلے کا سادہ سا حل بتاتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ سر کے بالوں کو پہلے اچھی طرح دھولیا جائے اور انہیں پانی سے اچھی طرح صاف کرنے کے بعد ہی باقی جسم کو دھویا جائے۔ اس آسان احتیاط سے آپ کمر پر نکلنے والے دانوں سے بچ سکتے ہیں۔ کیونکہ سر کو صحیح طرح ساتھ نہ کرنے کی وجہ سے ہمارے جسم میں شاپنگ کے اثرات رہ جاتے ہیں جس کی وجہ سے ہمارے بدن پر دانے نکل آتے ہیں۔ اس لیے ہمیں چاہیے کہ تیرے سر کو اچھی طرح صاف کریں پھر اس کے بعد سارے بدن پر پانی پھیر دیں ایسے ہم دانوں سے بچ سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *