مسلمان جب بھی قرآن کی طرف لوٹے ترقی حاصل کی، اسلام آباد میں قرآن کمپلیکس تعمیر کرنے کا فیصلہ

پاکستان تحریک انصاف کے ممبر اور وفاقی وزیر مذہبی امور پھر نورالحق قادری کا کہا ہے۔ کہ اسلام آباد میں قرآن کمپلیکس کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا ہے جہاں قرآنی بوسیدہ اوراق کو ری سائیکل کیا جائے گا۔ مندر کی تعمیر کے بارے میں انہوں نے کہا۔ کہ مندر کی تعمیر اسلامی نظریاتی کونسل کی سفارشات کے بعد کیا جائے گا۔ اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں ا میڈیا سے بات چیت کرتے ہوے کہا۔

>

وفاقی وزیر نے کہا اللہ سبحانہ و تعالی نے قرآن کی حفاظت کا ذمہ خود لیا ہے اور آج مجھے لگ رہا ہے کہ مسلمان قرآن کی طرف لوٹ رہے ہیں مسلمان جب بھی قرآن کی طرف لوٹا ہے تو اس نے ترقی کی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اس طرح کی سرگرمیوں کی حوصلہ افزائی کررہی ہے اسلام آباد میں ایک قرآن کمپلیکس بنانے جارہے ہیں جہاں پر بوسیدہ قرآنی اوراق کو ری سائیکل کرکے دوبارہ قرآن پاک کی اشاعت کی جائے گی انہوں نے کہا کہ اخباری پیپر والے کاغذ پر قرآن چھاپنے پر پابندی لگائی ہے اور ایک خاص وزن اور معیار ی کاغذ لازمی کررہے ہیں انہوں نے کہا کہ تمام مسالک کے لئے ایک ترجمے والا متفقہ قرآن شائع کرنے کی کوشش کر رہے ہیں وفاقی وزیر نے کہا کہ اسلام آباد میں مندر کی تعمیر کا معاملہ اسلامی نظریاتی کونسل کے سپرد کردیا ہے اورکونسل جو فیصلہ کرے گی ہمیں قبول ہوگا اگر مندر کا معاملہ مختلف مسالک کے علمائے کرام کے سپرد کرتے تو اختلاف سامنے آسکتا تھا انہوں نے کہا کہ اسلامی نظریاتی کونسل آئینی ادارہ ہے جو وہ رائے دے گی وہی سب کے لئے قابل قبول ہوگا ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر نے کہا کہ مندر کے لئے زمین کا سوال علما کرام نے نہیں پوچھا تھا انہوں نے صرف یہ پوچھا تھا کہ سرکاری فنڈز سے مندر تعمیر ہوسکتی ہے یا نہیں اور مفتی تقی عثمانی سمیت دیگرعلمائے کرام نے بھی سرکاری فنڈز سے مندر کی تعمیر کے بارے میں پوچھا تھا زمین کے بارے میں نہیں پوچھا تھا۔ واضح رہے کہ مندر کی تعمیر تب تک ممکن نہیں۔ جب تک اسلامی نظریات کونسل سے اس کے سفارشات منظور نہ ہو۔

Sharing is caring!

Comments are closed.