دل کی صفائی کے لیے دعائیں

دل کی صفائی سے کیا مراد ہے ؟ یعنی دل میں کسی بھی شخص کے لیے کسی بھی قسم کا بغض حسد یا نفرت نا رکھنا-ہر کسی کی طرف سے دل کا صاف ہونا-آج کل کے معاشرے میں صاف دل کے حامل لوگ بہت کم دیکھنے کو ملتے ہیں-ہر کوئی آپس میں بغض رکھتا ہے

>

-منہ پہ کچھ اور دل میں کچھ اور-جس کا دل صاف نہیں ہوتا اس کا صالح اعمال کرنے کا بھی دل نہیں کرتا-وہ اپنے آپ کو نہیں دیکھتا بلکہ دوسروں میں ہی نقص نکالتا رہتا ہے-دل کو صاف رکھنے کے لیے ہم یہ دعا کر سکتے ہیں:

اللھم طھر قلبی من النفاق وعملی من الریاء ولسانی من الکذب وعینی من الخیانته فانك تعلم خائنة الاعین وما تخفی الصدور “اے اللہ تو میرے دل کو نفاق سے پاک کردے اور میرے کام کو دکھلاوے اور زبان کو جھوٹ سے اور میری آنکھ کو چوری و خیانت سے (پاک صاف کر دے) کیوں کہ تو آنکھ کی خیانت اور دل کی پوشیدہ باتوں کو خوب جانتا ہے” اس دعا میں ہم صرف دل کے صاف ہونے کا نہیں

بلکہ زبان کے جھوٹ اور آنکھ کی خیانت سے بھی پناہ مانگتے ہیں-آنکھ کی خیانت یعنی کوئی غلط چیز دیکھ لی یا نامحرم کو جان بوجھ کر دیکھنا-یہ سب آنکھ کی خیانت میں آتا ہے-اسی لیے جب بھی آپ کہیں جا رہے ہوں تو اپنی نظریں جھکا کر چلیں-زبان سے جھوٹ بہت سی چیزوں کو تباہ کر دیتا ہے-لیکن آج کل تو ہمیں جھوٹ گناہ لگتا ہی نہیں-یاد رکھیں چھوٹا سا بولا گیا جھوٹ بھی جھوٹ ہی ہوتا ہے

اس کی سزا میں کوئی کمی نہیں آتی-دل کو صاف رکھنے کے لیے صبح شام اللہ تعالی کی حمد و ثناء کریں اور اپنے دل کو فضول سوچوں سے دور رکھیں-تیسرا کلمہ، استغفار اور درود کو سو مرتبہ پڑھنے سے ہمارا دل ہر قسم کے وسوسے سے صاف رہے گا-یہ دن میں ایک مرتبہ بھی پڑھیں گے تو بہت ہوگا-اپنے آپ کو اللہ کے ذکر میں لگائے رکھا کریں-اس طرح ہم وسوسں سے دور رہیں گے-

ایک بزرگ شخص تھے جو کہ صرف فرض نمازیں ہی ادا کیا کرتے تھے لیکن ان کا دل ہر قسم کی نفرت سے صاف تھا-ان کے دل میں کسی ایک فرد کے لیے بھی نفرت نا تھی تو رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ان کو جنتی قرار دیا تھا-

Sharing is caring!

Comments are closed.