حضورپاک کی مہمان نوازی

سبحان اللہ۔ ایک عورت رسول کے پاس آئی اور اپنے شوہر کی شکایت کی کہ وہ بہت زیادہ اپنے دوستوں کو گھر دعوت دیتا رہتا ہے اور وہ تھک جاتی ہے کھانے بنا بنا کے اور ان کی مہمانداری میں . حضورؐ نے کوئی جواب نہیں دیا اور وہ عورت واپس چلی گئی۔

کچھ دیر بعد رسول پاکؐ نے اس عورت کے شوہر کو بلوایا اور فرمایا ، ” آج میں تمہارا مہمان ہوں .” وہ آدمی بہت خوش ہوا اور گھر جا کے اپنی بیوی کو بتایا کہ رسول پاکؐ آج ہمارے مہمان ہیں ” . اس کی بیوی بیحد خوش ہو ئی اور وقت لگا کر محنت سے ہر اچھی چیز تیار کرنے میں مصروف عمل ہوگئی . اس زبردست پر تکلف دعوت کے بعد رسول پاکؐ نے اس شخص سے کہا کہ ‘اپنی بیوی سے کہنا کہ اس دروازے کو دیکھتی رہے جس سے میں جائوں گا ‘. تو اس کی بیوی نے ایسا ہی کیا اور دیکھتی رہی کہ کس طرح رسول پاکؐ کے گھر سے نکلتے ہی آپ کے پیچھے بہت سے حشرات ، بچھو اور بہت سے مہلک حشرات بھی گھر سے باہر نکل گئےاور یہ عجیب و غریب منظر دیکھ کر وہ بے ہوش ہو گئی . جب وہ رسول پاکؐ کے پاس آئی تو آپ نے فرمایا کہ ” یہ ہوتا ہے جب تمہارے گھر سے مہمان جاتا ہے ، تو اپنے ساتھ ہر طرح کے خطرات ، مشکلات اور آزمائشیں اور مہلک جاندار گھر سے باہر لے جاتا ہے ، اور یہ اسی وجہ سے ہوتا ہے کہ جو تم محنت کر کے اس کی خدمت مدارت کرتی ہو .” جس گھر میں مہمان آتے جاتے رہتے ہیں الله اس گھر سے محبت کرتا ہے . اس گھر سے بہتر اور کیا ہو کہ جو ہر چھوٹے بڑے کےلئے کھلا رہے.ایسے گھر پر الله کی رحمت اور بخشیش نازل ہوتی رہتی ہیں . رسول پاکؐ نے فرمایا ، “جب الله کسی کا بھلا چاہتے ہیں تو ، اسے نوازتے ہیں , انہوں نے پوچھا ، ” کس انعام سے ؟ اے الله کے رسول پاکؐ؟” آپ نے فرمایا ، ” مہمان اپنا نصیب لے کر آتا ہے ، اور جاتے ہوئے گھر والوں کے گناہ اپنے ساتھ لے جاتا ہے . میرے عزیزو ! جان لو کہ مہمان جنت کا راستہ ہے . رسول پاکؐ کا ارشاد ہے کہ ، ” جو اللہ اور روز آخر پر ایمان رکھتا ہے وہ اپنے مہمان کے ساتھ بے لوث ہو ۔

L

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *